Frequently Asked Questions in Urdu

 
نیا پاکستان قومی صحت کارڈ پروگرام کیا ہے؟
اس پروگرام کے تحت نادرا کے ریکارڈ کے مطابق پنجاب کے ہر مستقل رہائشی خاندان کو منتخب سرکاری و نجی ہسپتالوں میں داخلے کی صورت میں نیا پاکستان قومی صحت کارڈ  کے تحت سالانہ 10 لاکھ روپے تک کے مفت علاج کی سہولت فراہم کی جا رہی ہے۔
 
صحت کارڈ حاصل کیسے کیا جائے؟ کیا اس کے لئے کسی جگہ رجسٹریشن کی ضرورت ہے؟
 نیا پاکستان قومی صحت کارڈ کے حصول کے لئے کسی طرح کی رجسٹریشن کی ضرورت نہیں ہے، حکومتی ریکارڈ کے مطابق اہل خاندانوں سے خود رابطہ کر کے حکومت کی طرف سے انھیں صحت کارڈ مہیا کیا جاتا ہے۔ تا ہم صحت کارڈ کے تحت علاج کی بلا تعطل اور بر وقت فراہمی کے لئے ضروری ہے کہ خاندان کا تمام افراد کے کوائف کا  نادرا  میں  درست  اور مکمل اندراج ہو۔
 
نیا پاکستان قومی صحت کارڈ  کے تحت کون کون علاج کی سہولت حاصل کر سکتا ہے؟
 ایک خاندان کو ایک  نیا پاکستان قومی صحت کارڈ جاری کیا جاتا ہے جس کے تحت خاندان کا سربراہ، اسکی شریکِ حیات اور غیر شادی شدہ بچے،  منتخب سرکاری و نجی ہسپتالوں میں داخلے کی صورت میں،  علاج کی سہولت حاصل کر سکتے ہیں۔  نادرا کے ریکارڈ کے مطابق پنجاب کے ہر مستقل رہائشی خاندان کو اس پروگرام کے تحت منتخب سرکاری و نجی ہسپتالوں میں داخلے کی صورت میں مفت علاج کی سہولت حاصل ہو گی۔
 
 سالانہ 10 لاکھ روپے کی کوریج میں کیا کیا شامل ہے؟
نیا پاکستان قومی صحت کارڈ کے تحت منتخب ہسپتال میں صرف داخلے کی صورت  میں علاج  (Indoor) کی سہولت میسر ہے۔
اس پروگرام میں ثانوی علاج کے لئے  خاندان کو ہسپتال میں داخلے کی صورت میں سالانہ60,000/-روپے تک کے علاج کا تحفظ فراہم کیا گیا ہے جبکہ ترجیحی علاج کے لئے ہر خاندان کوہسپتال میں داخلے کی صورت میں سالانہ400,000/-  روپے تک کے علاج کا تحفظ فراہم کیا گیا ہے۔
درج ذیل صورتوں میں  انشورنس کی رقم 7 لاکھ روپے  سالانہ  فی خاندان تک بڑھ سکتی ہے؛
٭            مریض ہسپتال میں داخل ہو اور علاج کے لئے دستیاب رقم کی حد ختم ہو گئی ہو۔
٭            مریض کی زندگی کو خطرہ لاحق ہو  اورصحت کارڈ کی  رقم کی حد پہلے سے ختم ہو چکی ہو۔
٭            زچگی کیس۔
جبکہ خصوصی حالات میں ان 7 لاکھ کے علاوہ 3 لاکھ  روپے کی مختص  رقم بھی استعمال ہو سکتی ہے، جیسا کہ؛
٭            کینسر کا جاری علاج
٭            امراضِ قلب کا علاج، جو کہ مقرر کردہ انشورنس کی رقم کی حد سے زیادہ ہو۔
٭            گردوں کے امراض کا جاری علاج
٭            گردوں کی پیوند کاری
 
صحت کارڈ کے تحت کون کون سی بیماریوں کا مفت علاج ممکن ہے؟
1۔ ثانوی علاج
اس پروگرام کے تحت ہر رجسٹرڈ خاندان کو ہسپتال میں داخلے کی صورت میں سالانہ60,000/-روپے تک کی رقم کا تحفظ فراہم کیا گیا ہے۔
٭            اس میں وہ تمام علاج شامل ہیں جن میں ہسپتال میں داخلہ ضروری ہو۔
٭             حادثہ جس میں ہسپتال میں داخلہ ضروری ہو۔
٭             حمل و زچگی اور اس متعلق بیماریاں جن میں ہسپتال میں داخلہ ضروری ہو۔
٭             نارمل ڈیلیوری (Normal Delivery)    /  سی سیکشن
٭             زچگی کی پیچیدگیاں
٭            پیدائش سے پہلے چار بار معائنہ، بچے کی پیدائش کے بعد ایک معائنہ اور ایک مرتبہ نوزائیدہ بچے کا معائنہ
٭             ہسپتال سے اخراج کے بعد ایک بار معائنہ
2۔ ترجیحی علاج
اس پروگرام کے تحت پنجاب کے ہر خاندان کوہسپتال میں داخلے کی صورت میں سالانہ400,000/-  روپے تک کی رقم تک کا تحفظ فراہم کیا گیا ہے۔
ترجیحی علاج میں شامل پیچیدہ اور بھاری اخراجات والی بیماریاں:
٭             امراض قلب           
٭             ذیابیطس سے متعلق پیچیدگیاں جن میں داخل ہونا ضروری ہو
٭             حادثاتی چوٹیں (زندگی بچانے کے علاوہ ہڈیوں کی ٹوٹ پھوٹ، سڑک کا حادثہ، جلنے کا علاج)
٭             اعضاء (دل، جگر، گردے، پھیپھڑے) کے ناکارہ ہونے کی صورت میں علاج
٭             دائمی بیماریوں کی پیچیدگی کا علاج، جیسا کہ (یرقان Hepatitis B، کالا یرقان Hepatitis C)
٭             سرطان کے امراض
٭             آخری درجے پر گردوں کی بیماری
٭             اعصابی نظام کی جراحی
٭            گردوں کی پیوند کاری
٭            تھیلیسیمیا کا علاج
 
ہسپتال میں داخلے کا طریقہ کار کیا ہے؟
 ٭            اس پروگرام کے تحت آپ کو منتخب سرکاری و نجی ہسپتالوں میں داخلے کی صورت میں نیا پاکستان صحت کارڈ  پر مفت علاج کی سہولت فراہم کی جائے گی۔
٭             ہسپتال میں داخلے کیلئے جانے سے قبل یہ اطمینان کرلیں کہ آپ کے پاس آپ کا  نیا پاکستان صحت کارڈ،  اصل قومی شناختی کارڈ اور بچوں کے داخلے کی صورت میں ان کا ب فارم لازمی موجود ہو۔
٭            ان دستاویزات کے ساتھ ہمارے منتخب کردہ ہسپتالوں میں سے کسی بھی قریبی ہسپتال کا انتخاب کریں۔ وہاں پہنچنے پر اس پروگرام کا نمائندہ ہسپتال کے استقبالئے پر آپ کی رہنمائی کیلئے موجود ہوگا۔
٭             نمائندہ آپ کے قومی شناختی کارڈ کی جانچ کرے گا اور متعلقہ شعبے تک آپ کی رہنمائی کرے گا۔
 
کیا ادویات اور تشخیصی ٹیسٹ بھی مفت ہیں؟
ہسپتال میں داخلے کے بعد تمام علاج بشمول ادویات اور تشخیصی ٹیسٹ مفت ہیں، یہی نہیں بلکہ ہسپتال سے اخراج کے بعد پانچ دن کی ادویات بھی ہسپتال فراہم کرتا ہے۔
 
کون کون سے ہسپتالوں سے علاج کی سہولت حاصل کی جا سکتی ہے؟

پر ملاحظہ کی جا سکتی ہے۔ https://phimc.punjab.gov.pk/divisionwiselistصحت سہولت پروگرام کے تحت  پنجاب میں منتخب شدہ ہسپتالوں کی فہرست ہماری ویب سائٹ

کیا پنجاب کا کوئی شہری کسی اور صوبے سے بھی علاج حاصل کر سکتا ہے؟
 پنجاب کا کوئی بھی مستقل رہائشی  خاندان  پاکستان بھر میں کسی بھی  منتخب سرکاری و نجی ہسپتالوں سے  نیا پاکستان صحت کارڈ کے تحت ہسپتال میں داخلے کی صورت میں مفت علاج کی سہولت حاصل کرسکتا ہے۔
 
جب تک صحت کارڈ نہیں ملتا، کیا شناختی کارڈ پر علاج کی سہولت میسر ہوگی؟
کسی پریشانی سے بچنے کے لئے نیا پاکستان صحت کارڈ ہمراہ لانا ضروری ہے تاہم بروقت  اور  بلا تعطل  علاج کی فراہمی کو یقینی بنانے کے لئے  قومی شناختی کارڈ کے تحت بھی علاج کی سہولت میسر ہوگی۔
 
نیا پاکستان قومی صحت کارڈ  کی نمایاں خصوصیات کیا ہیں؟
٭            صحت کارڈ سے مستفید ہونے کیلئے  خاندان کے  تمام کوائف (مثلاً شادی، پیدائش، وفات وغیرہ) کا نادرا میں درست اندراج  ضروری ہے۔
٭            یہ سہولت صرف ہسپتال میں داخلے کی صورت میں ہی میسر ہوگی۔
٭            ہسپتال میں داخلے کے دوران مریض کو کسی بھی قسم کے اخراجات کی ادائیگی نہیں کرنی ہوگی۔
٭            خاندان کے افراد کی تعداد کی کوئی حد نہیں۔
٭             پروگرام میں شامل افراد کی عمر کی کوئی حد نہیں۔
٭             ثانوی علاج کیلئے ہسپتال میں داخلے کی صورت میں داخلے سے ایک دن قبل کی اور ہسپتال سے اخراج کے بعد مزید پانچ دن کی ادویات ہسپتال فراہم کرے گا۔